TURK FOREIGN MINISTER

ترک وزیر خارجہ کی پاکستان آمد،وزیرِ خارجہ شاہ محموقریشی سے ملاقات میں پاکستان اور ترکی کے مابین دوطرفہ تعلقات پر اطمینان اورعالمی سطح پر اسلامو فوبیا کے بڑھتے ہوئے رجحان پرتشویش کا اظہار کیا۔وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی سے ترک وزیرخارجہ کی ملاقات ہوئی ، ملاقات میں دوطرفہ کثیرالجہتی تعلقات اور باہمی دلچسپی کےمعاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ دونوں ممالک کے وزرائے خارجہ نے پاکستان اور ترکی کےمابین دوطرفہ تعلقات پراطمینان کااظہار کرتے ہوئے اسٹریٹیجک کوآپریشن کونسل کےفیصلوں پرعملدرآمد یقینی بنانے پر اتفاق کیا اور اسٹریٹیجک اکنامک فریم ورک پرجلد عملدرآمدکویقینی بنانےپرزور دیا۔شاہ محمودقریشی نے ترک وزیرخارجہ کو بھارتی قابض افواج کے کشمیریوں پر مظالم اور بھارت کی وجہ سےخطےکودرپیش خطرات سے آگاہ کرتے ہوئے مسئلہ کشمیرپرترکی کی حمایت پرشکریہ بھی ادا کیا۔وزیرخارجہ نےا فغانستان میں قیام امن کیلئےپاکستان کی کاوشوں سےآگاہ کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کےمابین نقطہ نظرمیں مماثلت خوش آئند ہے۔وزرائےخارجہ نے ملاقات ،میں عالمی سطح پر اسلاموفوبیاکےبڑھتےہوئےرجحان پرتشویش کااظہار کرتے ہوئے اسلامی اقدارکےتحفظ کیلئےمشترکہ لائحہ عمل اختیار کرنے کی ضرورت پر بھی زوردیا ۔ خیال رہے کے ترک وفد میں ترک وزیرِ خارجہ، وزارت تعلیم اور وزارتِ تجارت سمیت دیگر محکموں کے اعلی حکام بھی شامل ہیں، علاوہ ازیں ترک ڈرامہ سیریل ارتغرل غازی میں بمسی بیرک کا کردار ادا کرنے والے نورتین سومیز، ایرتک بے کا کردار نبھانے والے ایبرک پیکان اور ڈرامہ کے پروڈیوسر اوزکان ایما بھی وفد میں شامل ہیں
ترک وزیر خارجہ کی پاکستان آمد، شاہ محموقریشی سے ملاقات دوطرفہ کثیرالجہتی تعلقات اور باہمی دلچسپی کےمعاملات پر تبادلہ خیال
وزیرِ خا رجہ نے مسئلہ کشمیرپرترکی کی حمایت پرشکریہ ادا کیا دونوں ممالک کےمابین نقطہ نظرمیں مماثلت خوش آئند ہے، وزیرِ خا رجہ

SSGC SINDH

سندھ بھر میں گیس کا بحران شدت اختیار کر گیا جس سے گھریلو صارفین سمیت کمرشل سیکٹر کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ سندھ ہائی کورٹ نے گیس کی قلت پر ڈائریکٹر سوئی سدرن گیس کمپنی کو طلب کرتے ہوئے وضاحت مانگ لی ہے۔
مزید تفصیلات اس رپورٹ میں ترجمان سوئی سدرن کیس کمپنی کا بیان سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے گیس کی کمی کے حوالے سے واضح وجوہات بتائی ہیں۔ترجمان کا کہنا ہے کہ ایس ايس جی سی کےگیس سسٹم میں موصول ہونےوالی گیس کی مقدارمیں کمی کے باعث گھریلو صارفین، کمرشل سیکٹر کی طلب پوری کرنے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔انہوں نے بتایا کہ سردیوں کے موسم میں گیس کی مقدار میں40ایم ایم سی ایف ڈی کی کمی واقع ہوئی ہے اور کم گیس ملنے کی سبب لائن پیک متاثر ہوا ہے۔انہوں نے بتایا ہے کہ کراچی کےجوعلاقےنیٹورک کےآخرمیں ہیں وہاں کم پریشر ہو سکتا ہے تاہم گھریلواورکمرشل صارفین کی طلب پوری کرنےکی کوشش کی جارہی ہیں۔ترجمان نے واضح کیا ہے کہ کوشش ہےلوڈ مینیجمنٹ کے ذریعے گیس کی کمی کو پورا کیا جا سکے گھریلو صارفین کو گیس کی ترسیل پوری کی جا سکے۔دوسری جانب سندھ ہائی کورٹ میں کراچی میں گیس کی قلت کے خلاف درخواست پر سماعت ہوئی، درخواست گزار محمود اختر نقوی کا موقف تھا کہ گیس کی لوڈ شیڈنگ سے لوگوں کی زندگی اجیرن ہوچکی ہے، گھروں میں گیس نہیں جس کی وجہ سے روٹی بھی تندور سے لا رہے ہیں، 9 دسمبر 2020 کو عدالت نے جواب طلب کیا مگر جواب بھی نہیں دیا جا رہا، ایم ڈی سوئی سدرن گیس کو ذاتی حیثیت میں طلب کیا جائے۔ جس پر فاضل جج نے ریمارکس دیئے کہ ڈائریکٹر ایس ایس جی سی کو بلا رہے ہیں اور پوچھتے ہیں قلت کیوں ہے۔عدالت نے حکم دیا کہ سوئی سدرن گیس کمپنی حکام آئندہ سماعت پر ذاتی حیثیت میں پیش ہوں، بتایا جائے کراچی میں گیس کی کمی کیوں ہے اور گیس کی قلت ختم کرنے کے لیے کیا اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

SHAHIDA MINI

پاکستان کی معروف گلوکارہ و اداکارہ شاہدہ منی نے آئمہ بیگ کو مشورہ دیا ہے کہ وہ ناک سے گانا بند کردیں۔مزید تفصیلات اس رپورٹ میں پاکستان کے مقبول گلوکاروں کی تصاویر دکھا کر شاہدہ منی گلوکاروں کے حوالے سے ان کی رائے پوچھی گئی۔ سب سے پہلے شاہدہ منی کو گلوکارہ آئمہ بیگ کی تصویر دکھائی گئی اور آئمہ سے متعلق ان کی رائے پوچھی گئی۔
شاہدہ منی نے کہا سب ہی لوگ اپنے اسٹائل میں اچھا کام کررہے ہیں۔ آئمہ بیگ اس وقت انڈسٹری میں ہیں اور اچھا کام کررہی ہیں لیکن میں انہیں کہنا چاہوں گی کہ یہ ذرا ناک سے گانا بند کردیں۔علی ظفر کے بارے میں شاہدہ منی نے کہا علی ورسٹائل اور با ادب ہے۔ علی ظفر اور میں نے پی ٹی وی میں ایک ساتھ کام کیا تھا اور علی شروع سے بہت تیز اور محنتی تھا اور جب یہ کمرشلز میں آتاتھا تو مجھے لگتا تھا اس میں کوئی کرنٹ ہے۔

RUSSIAN RESTAURANT

روس میں سویت یونین دور کے کمیونسٹ رہنما جوزف اسٹالن کے خلاف شہریوں کی نفرت انتہا کو پہنچ گئی، اسٹالن کے نام سے کھلنے والا نیا ریستوران بند کرا دیا۔ مزید جانتے ہیں اس رپورٹ میں۔غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق روسی دارالحکومت ماسکو میں جوزف اسٹالن برانڈ ریستوران کھلنے کے ایک ہی دن بعد ہوگیا، ریستوران کے دروازے پر اسٹالن کی بہت بڑی تصویر بھی نصب تھی۔ رپورٹ میں بتا یا گیا ہے کہ حکومتی تنبیہ اور شہریوں کی نفرت کو مدنظر رکھتے ہوئے مالک نے اپنا کاروبار بند کردیا،خیا ل رہے کہ یہ ایک شوراما ریستوران کے ساتھ ایک کیفے بھی تھا لیکن اس کی جوزف اسٹالن کے نام سے تشہری کی جارہی تھی جس پر عوام نے ناپسندیدگی کا اظہار کیا۔ اسٹالن برانڈ ریستوران میں کام کرنے والے ایک ملازم کی جرسی سویت دور کے سیکیورٹی اہلکاروں جیسی تھی جبکہ کھانوں کے نام بھی کمیونسٹ رہنماؤں سے منسوب تھے۔ہوٹل کے ملاک کا کہنا تھا کہ مجھے سوشل میڈیا پر بھی شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا جبکہ میں تو صرف شہرت حاصل کرنا چاہتا تھا۔ یاد رہے کہ سویت یونین کے دور میں اسٹالن کا اقتدار جبر اور قحط کی یادوں میں گھرا ہوا ہے، ان کا دور 1936 سے 1938 تک رہا، ان دو ڈھائی سالوں کے دوران 7 لاکھ شہریوں کی اموات بھی ہوئیں، البتہ بعض طبقہ اسٹالن کی حمایت کرتا ہے کیوں کہ انہوں نے دوسری عالمی جنگ میں نازی جرمنی کو شکست دے کر سوویت یونین کی ریاستی بقا کو یقینی بنایا تھا۔سویت یونین دور کے کمیونسٹ رہنما جوزف اسٹالن کے خلاف روسی شہریوں کی نفرت انتہا اسٹالن کے نام سے کھلنے والا نیا ریستوران بند کرا دیا

VEGETABLE PRICE

سبزیوں کی قیمتوں میں اتار چڑھائو کا سلسلہ جاری ہے تاہم کئی اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ تو کچھ میں کمی دیکھنے کو ملی ہے۔ تفصیلات اس رپورٹ میں اوپن مارکیٹ میں سبزیوں کی قیمتیں لسٹ سے مختلف دکھائی دیئے جبکہ دکاندار ریٹ لسٹ کے بغیر من مانی قیمتوں پر سبزیاں فروخت کرنے میں مصروف رہے۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ آلو ریٹ لسٹ میں 38 روپے جبکہ اوپن مارکیٹ میں 50 روپے فی کلو تک فروخت کیا گیا، پیاز کی سرکاری قیمت 34 جبکہ مارکیٹ میں 45 تک فروخت ہوئی۔ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ ٹماٹر کی سرکاری قیمت 75 روپے جبکہ اوپن مارکیٹ میں 100 روپے فی کلو تک فروخت، لہسن 275 روپے فی کلو جبکہ اوپن مارکیٹ میں 300 روپے تک فروخت، ادرک چائنہ کاسرکاری ریٹ 310 جبکہ اوپن مارکیٹ میں 4 سو روپے تک فروخت کی گئی۔ ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ کریلے114، مٹر 50،مونگرے 76،ساگ 30، گاجر 34، چائنہ گاجر 71، بھنڈی 197، شملہ مرچ93، سبز مرچ 192,پھول گوبھی 17، بند گوبھی 30، بینگن 42 روپے فی کلو فروخت ہوئی

SOCIAL APP BY PAKISTAN

حکومت پاکستان نے عالمی طرز کی سماجی رابطے کی ایپ تیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ سماجی رابطہ ایپ وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اور آئی ٹی ماہرین تیار کریں گے۔ یہ جدید سماجی رابطہ ایپ مکمل تحفظ پر مبنی ہوگی۔ اس میں مسیجز، وائس کال، ویڈیو کال سمیت دیگر تمام خصوصیات شامل ہوں گی۔ اس سماجی رابطہ ایپ کی تیاری پر بات چیت جاری ہے، وفاقی کابینہ کی منظوری کے بعد اس سماجی رابطہ ایپ پر باقاعدہ کام شروع ہوجائے گا۔اس حوالے سے رابطہ کرنے پر وفاقی وزیر آئی ٹی امین الحق نے ملکی سطح پر عوام کی سہولت کے لیے سماجی رابطہ ایپ بنانے کا فیصلہ کیا ہے، اسے پاکستانی آئی ٹی ماہرین تیار کریں گے، اس ایپ میں سماجی رابطوں کے حوالے سے تمام سہولیات میسر ہوں گی۔وفاقی وزیر نے بتایا کہ اس ایپ کے ذریعے مسیجز، وائس میسج، ویڈیو کالنگ کے ساتھ سماجی رابطوں کی جدید سہولیات میسر ہوگی، اس ایپ میں ممکنہ طور پر موبائل نمبر اور شناختی کارڈ سے رجسٹریشن ہوگی، اس میں لوگوں کے ڈیٹا اور پیغامات کا مکمل تحفظ ہوگا اور صارف کی ذاتی معلومات کو بھی تحفظ حاصل ہوگا۔
امین الحق نے بتایا کہ اس رابطہ ایپ میں غیر اخلاقی مواد کو شیئر نہیں کیا جاسکے گا، یہ سماجی رابطہ ایپ تجرباتی بنیادوں پر تیار کرنے کے بعد پہلے مرحلے میں بڑے شہروں میں شروع کی جائے گی جس کے بعد اس کا دائرہ کار پورے ملک میں وسیع کردیا جائے گا، اس مرحلے کے بعد عالمی سطح پر اس سماجی رابطہ ایپ کو متعارف کرایا جائے گا۔
وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ اس ایپ کو رواں برس شروع کردیا جائے، اس کی تیاری پر جلد وزارت اور مقامی آئی ٹی ماہرین کام شروع کردیں گے، یہ ایپ وزارت آئی ٹی کے ماتحت ہوگی۔

SINDH POLIO VACINE

سندھ میں پولیو مہم کا افتتاح ۔۔۔صوبے کے 29 اضلاع میں 90 لاکھ 5 سال سے کم عمر بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلائے جائیں گے۔۔۔۔کراچی میں پولیو مہم کا افتتاح کمشنر کراچی نوید احمد شیخ نے کیا ۔۔۔ تفصیلات اس رپورٹ میں
سندھ بھر میں11جنوری سے17 جنوری تک پولیو مہم چلائی جائے گی، انسداد پولیو مہم کے دوران سندھ کے29 اضلاع میں 90 لاکھ 5 سال سے کم عمر بچوں کو پولیو سے بچاؤ کی خوراک پلائی جائے گی ان میں سے 20 لاکھ سے زیادہ بچے کراچی میں مقیم ہیں، مہم کے دوران6 ماہ سے لے 59 ماہ (4 سال 11 ماہ) کی عمر کے بچوں کو وٹامن اے کی خوراک بھی دی جائے گی۔
مہم کے دوران عالمی ادارہ صحت کی جانب سے رائج کردہ کورونا وائرس سے بچاؤ کی تمام احتیاطی تدابیر (ایس او پیز) پر عمل کیا جائے گا جس میں پولیو ورکرز کا ماسک پہننا اور تعیناتی سے قبل بخار چیک کرانا، بچوں کو براہ راست نہ سنبھالنا، گھروں میں داخل نہ ہونا، اہل خانہ کے ساتھ محدود وقت گزارنا اور قلم یا کہنی سے دروازہ کھٹکھٹانا شامل ہیں۔
ایمرجنسی آپریشن سینٹر برائے پولیو سندھ کے ترجمان کے مطابق کورونا وبا اور لاک ڈاؤن کے باعث گزشتہ سال کے دوران مارچ سے جولائی تک انسداد پولیو مہم نہیں جلائی جاسکی لیکن اگست 2020 سے بچوں میں قوت مدافعت بڑھانے کے لیے ہر ماہ پولیو مہم تواتر سے جلائی جارہی ہے، اگر ہم اسی رفتار کے ساتھ انسداد پولیو مہم جاری رکھیں گے تو جلد ہی اس کے بہترنتائج بھی سامنے آئیں گے۔
ترجمان کا کہنا ہے کہ جولائی 2020 سے سندھ میں پولیو کا کوئی بھی کیس سامنے نہیں آیا ہے، پولیو جیسی موذی بیماری سے بچوں کو ویکسی نیشن کے ذریعے بچایا جاسکتا ہے اور ہم اس کے بارے میں شعور اجاگر کرنے کے لیے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔

PM Imran Khan

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاناما پیپرز کے بعد براڈ شیٹ نے بھی ہمارے امیر حکمرانوں کی کرپشن اور منی لانڈرنگ کو بے نقاب کیا ہے۔سوشل میڈیا پر جاری اپنے بیان میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پہلے پاناما پیپرز کے ذریعے ہمارے امیر حکمرانوں کی کرپشن اور منی لانڈرنگ سامنے آئی اور اب براڈ شیٹ نے بھی اشرافیہ کی بڑے پیمانے پر کرپشن اور منی لانڈرنگ کو بے نقاب کیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ بین الاقوامی انکشافات کے بعد یہ اشرافیہ انتقامی کارڈ کے پیچھے نہیں چھپ سکتی۔
انہوں نے کہا کہ بار بار اشرافیہ کا بے نقاب ہونا کرپشن کے خلاف میری 24 سال کی جدوجہد کو بیان کر رہا ہے، یہ اشرافیہ حکومت میں آئی اور ملک کو تباہ کیا۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ اشرافیہ نے بیرون ملک غیر قانونی اثاثے بنانے کے لیے منی لانڈرنگ کی، خود کو مقامی قانون سے بالاتر کیا اور پھر اپنا سیاسی اثر و رسوخ استعمال کر کے این آر او کا سہارا لیا، اس طرح ان لوگوں لوٹی ہوئی ملکی دولت کو محفوظ بنایا اور پاکستانی عوام کو سب سے زیادہ نقصان ہوا۔عمران خان کا کہنا تھا کہ ان لوگوں نے صرف عوام کی دولت کو ہی نہیں لوٹا بلکہ ٹیکس دہندگان کے پیسے کو این آر او کے ذریعے ضائع کیا گیا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ انکشافات کو صرف ایک چھوٹا سا حصہ ہے، ہم براڈ شیٹ سے اشرافیہ کی منی لانڈرنگ کی مکمل اور شفاف چاہتے ہیں اور یہ بھی چاہتے ہیں کہ بتایا جائے کہ کس نے تحقیقات رکوائیں۔

PASSPORT RANKING

دنیا بھر میں طاقت ور ترین پاسپورٹ کا حامل ملک کا اعزاز جاپان نے اپنے نام کرلیا ہے جب کہ کم زور ترین پاسپورٹ افغانستان کا ہے۔ مضبوط یا طاقتور ترین پاسپورٹ ان ممالک کا سمجھا جاتا ہے جنہیں دنیا کے کئی ممالک میں ’ویزہ فری‘ کی سہولت حاصل ہوتی ہے۔مزید تفصیلات اس رپورٹ میں ہینلے پاسپورٹ انڈیکس حالیہ جاری کردہ رپورٹ میں طاقتور ترین پاسپورٹ کے حامل ممالک کی فہرست کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ مضبوط یا طاقتور ترین پاسپورٹ ان ممالک کا سمجھا جاتا ہے جنہیں دنیا کے کئی ممالک میں ’ویزہ فری‘ کی سہولت حاصل ہوتی ہے۔اس فہرست میں جاپان نے سنگاپور کو ٹف مقابلے کے بعد پیچھے چھوڑ دیا اور اوّل نمبر پر تن تنہا براجمان ہے جب کہ گزشتہ برس یہ اعزاز سنگاپور اور جاپان نے مشترکہ طور پر حاصل کیا تھا۔ جاپانی ویزے پر 191 جب کہ سنگاپور کے وزیرے پر 190 ممالک میں بغیر ویزے کے سفر کیا جا سکتا ہے۔
تیسرے نمبر پر جنوبی کوریا اور جرمنی ہیں جن کے پاسپورٹ پر 189 ممالک نے ویزہ فری پالیسی اپنائی ہوئی ہے اسی طرح چوتھے نمبر پر اٹلی، فن لینڈ اور اسپین ہیں جن کے پاسپورٹس پر 188 ممالک میں داخل ہونے کے لیے ویزے کی ضرورت نہیں جب کہ بھارت 85 ویں نمبر پر ہے۔سب سے کمزور پاسپورٹ افغانستان کا ہے جب کہ اس کے بعد کمزور ترین پاسپورٹ میں بالترتیب عراق، شام اور پاکستان ہیں۔ ان ممالک کے پاسپورٹ پر صرف 26 سے 32 ممالک کے لیے ویزہ فری پالیسی ہے۔
واضح رہے کہ یہ فہرست دنیا بھر کے ممالک کے پاسپورٹس کو سفر کی آزادی کے لحاظ سے ترتیب دی جاتی ہے اور اس کے پیچھے کئی عوامل کارفرما ہوتے ہیں جن میں امن و امان، معیشت اور سیاسی کشمکش شامل ہیں۔

MICK PENSE ADRESS

امریکا کے سیکریٹری خارجہ مائیک پومپیو نے الزام عائد کیا ہے کہ ایران عالمی دہشت گرد تنظیم القاعدہ کا نیا مرکز بن چکا ہے۔ پومپیو نے کہا کہ ایران اور القاعدہ کے مابین 2015 کے بعد سے تعلقات بہتر ہونا شروع ہوئے۔مزید تفصیلات اس رپورٹ میں
واشنگٹن میں نیشنل پریس کلب سے خطاب کرتے ہوئے پومپیو نے کہا کہ القاعدہ نے تہران کو اپنی سرگرمیوں کا مرکز بنا لیا ہے اور تنظیم کے سربراہ ایمن الظواہری کے کئی نائبین ایرانی دارالحکومت میں موجود ہیں۔
پومپیو نے کہا کہ ایران اور القاعدہ کے مابین 2015 کے بعد سے تعلقات بہتر ہونا شروع ہوئے ، جس وقت امریکا اور دیگر مغربی قوتوں کے ساتھ اس کا جوہری معاہدہ طے پارہا تھا۔ اس کے بعد سے ایران نیا افغانستان بن چکا ہے اور القاعدہ کے مرکز کی صورت میں یہ اس سے بھی بدترین ثابت ہوگا کیوں کہ افغانستان میں تو القاعدہ پہاڑوں اور ویرانوں میں کام کرتی تھی، لیکن یہاں اسے ایرانی حکومت کی چھتر چھایا حاصل ہوجائے گی۔آئندہ ہفتے تک اپنے عہدے سےسبکدوش ہونے والے سیکریٹری خارجہ مائیک پومپیو نے کہا کہ پوری دنیا کو تہران پر اپنا دباؤ بڑھانا ہوگا تاہم انہوں نے کسی فوجی کارروائی سے محتاط رہنے کا عندیہ دیا۔ واضح رہے کہ امریکی وزیر خارجہ نے اپنے الزامات اور دعوے سے متعلق کوئی ثبوت تاحال فراہم نہیں کیا۔
اُدھر ایران نے امریکی سیکریٹری خارجہ کے بیان کو جھوٹ کا پلندہ قرار دیا ہے۔ ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے اپنے ٹوئٹ میں کہا کہ کیوبا سے لے کر ایران کے ’راز افشا‘ کرنے اور القاعدہ جیسے دعوؤں سے امریکی وزیر دفاع اپنی تباہ کُن مدت کو جنگ کے لیے مشتعل کرنے والی کذب بیانی پر ختم کررہے ہیں۔