GOVT REVENUE

ڈپٹی کمشنرز سرکاری ریونیو کی حفاظت کرنے میں ناکام دکھائی دیتے ہیں جب کہ بلدیہ وسطی میں ایڈورٹائزمنٹ ٹیکس کی مد میں حکومتی خزانے کو لاکھوں روپے کا نقصان کرادیا گیا۔مزید تفصیلات اس رپورٹ میں راشد منہاس روڈ یوبی ایل اسپورٹس کمپلیکس کے بالمقابل شاپنگ سینٹر سے گزشتہ مالی سال 2019-20 میں ایڈورٹائزمنٹ کی مد میں محکمہ ایڈورٹائزمنٹ کے افسران نے23لاکھ25ہزار سے زائد مالیت کا چالان جاری کرکے مذکورہ فیس وصول کی تھی، رواں مالی سال میں محکمہ ایڈورٹائزمنٹ میں تعینات افسران نے مذکورہ ٹیکس میں اضافہ کرنے کے بجائے حیران کن طور پر کمی کرکے حکومتی خزانے کو کئی لاکھ روپے کا چونا لگادیا ہے۔دستاویزات کے مطابق رواں مالی سال2020-21کیلیے مذکورہ شاپنگ سینٹر کو صرف8لاکھ67ہزار کا چالان جاری کیا گیا،ذرائع کا کہنا ہے کہ محکمہ ایڈورٹائزمنٹ میں تعینات ایڈیشنل ڈائریکٹر محمد حارث اور حال ہی میں ریٹائرڈ ہونے والے ڈائریکٹر ایڈورٹائزمنٹ محمد اکمل نے ڈپٹی کمشنر وایڈ منسٹریٹر وسطی محمد بخش راجا دھاریجوکی ٹیکس وصول کے نظام میں انقلابی تبدیلی کے بلند وبانگ دعوؤں کی قلعی کھول کر رکھ دی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ رواں مالی سال میں مذکورہ ایڈورٹائزمنٹ ٹیکس میں اضافہ کیا جانا چاہیے تھا تاہم افسران نے مبینہ ذاتی فوائد کیلیے اس میں کمی کرکے ڈپٹی کمشنروسطی کی نیک نامی کو خطرے میں ڈال دیا ہے،ڈی ایم سی سینٹرل کے سینئر افسران نے مذکورہ بدعنوانی پر اعلیٰ تحقیقاتی اداروں اور اعلی حکام سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔

MARKET INFLATION

نئے سال کے آغاز پر بھی مہنگائی کا سلسلہ جاری ہے اورپیٹرول، آٹا، چینی، گھی اور تیل کے بعد دالیں اور چاول بھی مہنگے ہوگئے۔ سندھ حکومت انڈے، مرغی کے گوشت، سبزیوں کی بھی سرکاری نرخ پر فروخت کرانے میں ناکام مزید تفصیلات اس رپورٹ میں ہول سیل مارکیٹ میں ایک ہفتے کے دوران دالیں 15 روپے مہنگی ہوگئی ہیں، ہول سیل مارکیٹ میں ماش کی دال 15 روپے مہنگی ہوگئی، ہول سیل میں ماش کی دال 225 روپے سے بڑھ کر 235 روپے کلو ہوگئی جب کہ ریٹیل مارکیٹ میں ماش کی دال 245 سے 250 روپے کلو فروخت ہورہی ہے، ہول سیل میں مونگ کی دال بھی 15 روپے مہنگی ہوگئی،مونگ کی دال 230 روپے سے بڑھ کر 245 روپے کلو پر پہنچ گئی ہے۔ریٹیل مارکیٹ میں مونگ کی دال 250 سے 255 روپے کلو فروخت ہورہی ہے، ہول سیل میں باسمتی چاول بھی 10 روپے کلو مہنگا ہوگیا ہے اورچاول درجہ اول باسمتی 120 روپے کلو سے بڑھ کر 140 روپے کلو پر پہنچ گیا ہے،ریٹیل مارکیٹ میں باسمتی چاول درجہ اول 160 سے 180 روپے کلو فروخت ہورہا ہے۔
چنے کی دال میں 10 روپے فی کلو کمی آئی ہے اور چنے کی دال ہول سیل مارکیٹ میں 130 روپے سے کم ہوکر 120 روپے کلو پر آگئی،شہریوں کا کہنا ہے کہ سندھ اور وفاقی حکومت کی پالیسیوں نے عوام کی کمر توڑ کر رکھ دی۔سندھ حکومت انڈے، مرغی کے گوشت، سبزیوں کی بھی سرکاری نرخ پر فروخت کرانے میں ناکام ہے، ڈپٹی کمشنرز اور اسسٹنٹ کمشنرز نااہل نکلے، انڈے بھی سرکاری نرخ پر فروخت نہ کراسکے ،مارکیٹوں میں ہر چیز مہنگی بک رہی ہے

Pakistan Stock Market 2020

کورونا وبا اور لاک ڈاون کے باوجود پاکستان اسٹاک ایکس چینج نے رواں سال اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور اس کے بینچ مارک میں دو ہزار پوانٹس کا اضافہ ریکارڈ کیاگیا۔اسٹاک مارکیٹ کے پنڈت اگلے سال بینچ مارک کو پچپن سے ساٹھ ہزار پوانٹس تک جاتا دیکھ رہے ہیں۔ دنیا بھر میں معاشی گرواٹ کے باوجود سال دو ہزار بیس میں پاکستان کی اسٹاک مارکیٹ کی کارکردگی تسلی بخش رہی اور کرونا وبا کے دوران بھی ایشیائی مارکیٹس میں پاکستانی اسٹاک مارکیٹ کارکردگی کے لحاظ سے سرفہرست رہی ۔۔اسٹاک بروکرز کے نزدیک نیا سال بھی مارکیٹ کے لیے اچھا ثابت ہوگا۔ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں رواں سال کئی عر صے بعد چار سےزائد نئی کمپنیز نے اندراج کرایا جبکہ اس کا یومیہ کارباری حجم بھی کئی ماہ بعد دوبارہ پچاس کروڑ سے بھی تجاوز کرگیا سرمایہ کار بھی سالانہ کارکردگی سے خوش نظر آرہے ہیں۔۔اسٹاک مارکیٹ کے سرمایہ کاروں کو توقع ہےکہ اگلے سال مارکیٹ تیزی کے نئے ریکارڈ بنائے گی جس سے ان کی آمدنی میں مزید اضافہ ہوگا۔کورونا وبا اور لاک ڈاون کے باوجود پاکستان اسٹاک ایکس چینج کی اچھی کارکردگی
ایشیائی مارکیٹس میں پاکستانی اسٹاک مارکیٹ کارکردگی کے لحاظ سے سرفہرست
اسٹاک مارکیٹ تیزی کے نئے ریکارڈ بنائے گی، آمدنی میں مزید اضافہ ہوگا، سرمایہ کار

INFLATION

وزارت خزانہ حفیظ شیخ کا کہنا ہےکہ ضروری اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں 0.22 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی ہے جب کہ پچھلے 4 ہفتوں کے دوران مہنگائی کی شرح میں مستقل کمی آ رہی ہے وزارت خزانہ کی طرف سے جاری کردہ اعلامیے کےمطابق وزیر خزانہ حفیظ شیخ کی سربراہی میں نیشنل مانیٹرنگ کمیٹی کے اجلاس میں انڈوں اور خوردنی گھی کی قیمتوں میں اضافے کا نوٹس لیا گیا ہے۔
حفیظ شیخ کی سربراہی میں نیشنل پرائس مانیٹرنگ کمیٹی کوبتایا گیا کہ ضروری اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں 0.22 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی ہے جب کہ پچھلے 4 ہفتوں کے دوران مہنگائی کی شرح میں مستقل کمی آ رہی ہے،گندم، ٹماٹر، پیاز، آلو اور مرغی کی قیمت میں نمایاں کمی ہوئی۔ رپورٹ میں بتایاگیا ہےکہ حالیہ ہفتے 13 اشیاء سستی ہوئیں جن میں چینی کی فی کلو قیمت میں 7 روپے 13 پیسے کمی آئی اور ٹماٹر 14 روپے 39 پیسے فی کلو سستے ہوئے جب کہ ایک ہفتے کے دوران پیاز 5 روپے 51 پیسے، آلو 6 روپے 25 پیسے فی کلو، آٹا 18 پیسے فی اور لہسن کی فی کلو قیمت میں 2 روپے 89 پیسے کمی آئی
اعلامیے کے مطابق اجلاس میں سیکرٹری تجارت کو ہدایت کی گئی کہ صوبائی حکومتوں اور ایف بی آر کے نمائندوں کے ساتھ میٹنگ بلائیں تاکہ اس سلسلے میں مزید اقدامات اٹھائے جا سکیں۔ وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومتیں قیمتوں پر کڑی نگرانی کریں۔
دوسری جانب اجلاس میں سیکرٹری فوڈ سکیورٹی نے گندم اور چینی کے ذخائر کی موجودہ صورتحال پر بھی بریفنگ دی۔