یوئم ای علی جلوس

ملک کے مختلف شہروں سے یوم علیؓ کے سلسلے میں جلوس برآمد ہوگئے۔اندرون لاہور میں یوم شہادت حضرت علی کرم اللہ وجہہ کا مرکزی جلوس رات گئے مبارک حویلی سے برآمد ہو ا، یہ جلوس اپنے مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا صبح کے وقت کربلا گامے شاہ پہنچ کر اختتام پذیر ہو گا۔ْجلوس کے موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں، جلوس کے ساتھ ساتھ پولیس کی بھاری نفری بھی موجودہے، جلوس کے راستوں کی جانب کھلنے والی تمام گلیاں اوربازار خاردار تاریں اور قناتیں لگا کر بند کیے گئے ہیں۔کراچی میں یوم علیؓ کی مرکزی مجلس نشترپارک میں منعقد ہوئی جس سے علامہ شہنشاہ حسین نقوی نے خطاب کیا اور فضائل حضرت علیؓ بیان کیے۔مجلس کے بعد یوم علیؓ کا مرکزی جلوس نشترپارک سے بوتراب اسکاؤٹس کی قیادت میں برآمد ہوا جو اپنے روایتی راستوں، نمائش چورنگی، سی بریز پلازہ، صدر، ریگل چوک، تبت سینٹر، ریڈیو پاکستان سے ہوتا ہواکھارادر میں امام بارگاہ حسنیہ ایرانیان پر اختتام پزیر ہوگا۔مرکزی جلوس کی سکیورٹی کے لیے پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری تعینات ہے جب کہ جلوس کے راستوں میں آنے والی گلیوں اور سڑکوں کو کنٹینرز لگا کر سیل کیا گیا ہے، جلوس کی گزرگاہ میں آنے والی دکانوں اور مارکیٹوں کو بھی سیل کیا گیا ہے۔اس کے علاوہ کوئٹہ میں یوم علیؓ کی مناسبت سے ہزارہ ٹاؤن میں جلوس نکالا گیا ،اس موقع علاقے کومکمل سیل کر دیا گیا پولیس اور ایف سی کی بھاری نفری تعینات رہی۔

موسم

ایران سے بارش برسانے والا سسٹم تفتان میں داخل ہوگیا، جہاں بارش کے باعث ندی نالوں میں طغیانی آگئی۔ وادی کوئٹہ اور گردونواح میں ہلکی بارش کا سلسلہ وقفےوقفے سے جاری ہے، بارش کے بعد کوئٹہ میں موسم خوشگوار ہوگیا۔ایران سے برساتی ریلہ سرحدی شہر تفتان میں داخل ہوا۔ ریلہ داخل ہونے سے کسٹم روڈ پر ٹریفک جام ہوگیا، جبکہ دوسری جانب پانی ریلوے کالونی کے گھروں میں بھی داخل ہوگیا۔وادی کوئٹہ سمیت بلوچستان کےشمال مشرقی حصوں میں بارش کا نیا سسٹم گزشتہ شام داخل ہوا، جس کے بعد وادی کوئٹہ میں گرج چمک کےساتھ بارش کا سلسلہ شروع ہوا جو کہ آج بھی وقفے سےوقفے سےجار ی ہے۔
بارش کےبعد کوئٹہ میں موسم خوشگوار ہوگیا ہے، جبکہ صبح کےاوقات میں خنکی میں اضافہ ہوگیا، بارش سے ماحول اور سبزہ نکھر گیا ہے۔

شہادت حضرت علی

باب العلم شیر خدا مولائے کائنات حضرت علی علیہ السلام کا یومِ شہادت پاکستان سمیت پوری دنیا میں عقیدت و احترام سے منایا جارہا ہے۔ آپ امت مسلمہ کے چوتھے خلیفہ راشد اور رسول اکرم صلی علیہ وآلہ وسلم کے چچا زاد بھائی اور داماد تھے۔ جنہوں نے بچپن ہی سے تربیت آغوش نبی میں پائی حضرت علی علیہ السلام تیرہ رجب کو مکہ میں بیت اللہ کے اندر پیدا ہوئے۔ آپ کے والدگرامی حضرت ابو طالب علیہ السلام اور والدہ ماجدہ جنابِ فاطمہ بنت اسد دونوں قریش کے قبیلہ بنی ہاشم سے تعلق رکھتے تھے۔ نوحہ شیر خدا حضرت علی کرم اللہ وجہہ کے بارے میں جناب رسول اللہ ﷺ نے فرمایا کہ علی کا چہرہ دیکھنا عبادت ہے۔ اسپیس صحیح بخاری میں درج ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا علی کو مجھ سے وہی نسبت ہے جو موسیٰ کو ہارون سے تھی۔اسپیس رسول اکرم ﷺ نے ایک موقع پر ارشاد فرمایا کہ علیؑ کے گھر کے علاوہ مسجد نبوی کے اندر کھلنے والے تمام دروازے بند کر دیئے جائیں۔ اسپیس خاتم النبین ﷺ نے فرمایا علی مجھ سے ہے اور میں علی سے ہوں، علی حق کے ساتھ ہے اور حق علی کے ساتھ ہے، جس نے علی سے دشمنی کی ، اس نے مجھ سے دشمنی کی۔ اسپیس آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اپنی زندگی کے آخری ایام میں غدیر خم کے مقام پر ہزاروں مسلمانوں کے مجمع میں سے حضرت علی کو منتخب کرکے یہ اعلان فرما دیا کہ جس کا میں مولا ہوں اس کے علی بھی مولا ہیں۔ اسپیس انیس رمضان المبارک سن چالیس ہجری میں شام سے آئے ایک شقی القلب شخص عبد الرحمن بن ملجم نے مسجد کوفہ میں حضرت علی کرم اللہ وجہہ کو حالتِ سجدہ میں تلوار سے وار کرکے زخمی کردیا۔ زخمی ہونے پر آپ کے لبوں پر جو پہلی صدا آئی وہ تھی کہ ربِ کعبہ کی قسم آج میں کامیاب ہوگیا۔ فستب رب رب الکعبہ نیٹ حضرت علیؑ دو روز تک انتہائی کرب اور تکلیف کے ساتھ بستر پر رہے۔ اور اس دوران آپ نے یہ حکم دیا کہ ابن ملجم کو میرے قصاص میں اس وقت تک نہ مارا جائے جب تک میں زندہ ہوں ۔اسپیس اس قدر کمال انصاف صرف شیرخدا کا ہی خاصہ تھا کہ آپ کی روح جسم سے جدا ہونے کو ہے مگر بستر مرگ پر بھی آپ کی عدالت زندہ ہے،آخرکار تلوار کے زہر کا اثر جسم میں پھیل گیا اور آپ نے اکیس رمضان المبارک کو جام شہادت نوش کیاشیر خدا مولائے کائنات حضرت علی علیہ السلام کا یومِ شہادت پاکستان سمیت پوری دنیا میں یوم علیؑ عقیدت و احترام سے منایا جارہا ہے آپ امت مسلمہ کے چوتھے خلیفہ راشد،رسول اکرم صلی علیہ وآلہ وسلم کے چچا زاد بھائی اور داماد تھے حیدر کرار،فاطمہ بنت اسد کے لعل نے بچپن ہی سے تربیت آغوش نبیﷺ میں پائی

SAUDI RAMZAN TRAVIH

سعودی عرب میں رمضان کے آخری عشرے کے لیے جاری ایس او پیز میں ہدایت کی گئی ہے کہ تمام مساجد میں تراویح اور قیام اللیل کو عشا کے ساتھ نصف گھنٹے میں ادا کی جائے۔العربیہ نیوز کے مطابق سعودی عرب کے وزیر برائے مذہبی امور الشیخ ڈاکٹر عبداللطیف آل الشیخ نے ملک بھر کی تمام مساجد کے آئمہ کو ہدایت کی ہے کہ کورونا وبا کے پیش نظر نماز تراویح اور قیام اللیل کی نمازوں کو عشا کی نماز کے ساتھ ہی ادا کریں اور قیام اللیل 30 منٹ سے زیادہ کی نہیں ہونی چاہیئے۔سعودی وزارت مذہبی امور کی جانب سے مساجد کے آئمہ کے لیے ایک ہدایت نامہ بھی جاری کیا گیا ہے جس میں رات کی عبادت کو مختصر کرنے کے فیصلے پر عمل درآمد کرانے کو کہا گیا ہے اور شہریوں سے بھی استدعا کی گئی ہے کہ وبا کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ماہ صیام کے بقیہ دنوں میں مساجد میں اجتماعی عبادات کو مختصر رکھیں۔واضح رہے کہ خانہ کعبہ میں پہلے ہی اعتکاف کی اجازت نہیں دی گئی ہے جب کہ اجتماعی سحر و افطار پر بھی پابندی ہے۔ مسجد الحرام کو روزانہ 10 مرتبہ جراثیم کش ادویات اور پانی سے دھونے کا انتظام کیا گیا ہے۔

پی اے ایف پریس ریلیز

متحدہ عرب امارات کے سفیر کی سربراہ پاک فضائیہ سے ملاقات 03 مئی 2021: متحدہ عرب امارات کے سفیر عزت مآ ب جناب حماد عبید ابراہیم الزابی نے سربراہ پاک فضائیہ ائیر چیف مارشل ظہیر احمد بابر سدھو سے ان کے دفتر میں ملاقات کی۔ معزز مہمان نے پاک فضائیہ کی کمان سنبھالنے پر ائیر چیف کو مبارکباد پیش کی۔ انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان تمام شعبوں میں تعاون اور ہرممکن مدد کی یقین دہانی کرائی۔ سربراہ پاک فضائیہ نے کہا کہ پاکستان اور متحدہ عرب امارات کے مابین مضبوط مذہبی، ثقافتی اور تاریخی تعلقات استوار ہیں جو متحدہ عرب امارات کی فضائیہ اور پاک فضائیہ کے مابین مضبوط تعلقات کا مظہر ہیں۔ ملاقات کے دوران باہمی دلچسپی کے مختلف امور اور دوطرفہ تعاون پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ ترجمان پاک فضائیہ

ایل پی جی گیس کی قیمت

او جی ڈی سی ایل نے اوگرا کی مقرر کردہ پیداواری قیمت سے مزید 27 روپے فی کلو کمی کا اعلان کردیا۔ چیئرمین ایل پی جی ایسوسی ایشن نے بتایا کہ سرکاری پیداواری ادارہ او جی ڈی سی ایل نے اوگرا کی مقرر کردہ پیداواری قیمت 74,223.47روپے کو کم کر کے 47,000 مقرر کردی۔حکومت کی جانب سے عوام کے لئے رمضان المبارک اور عید کا تحفہ سامنے آیا ہے، چیئرمین ایل پی جی انڈسٹریز ایسوسی ایشن پاکستان کے مطابق صرف 2 دن میں پاکستانی ایل پی جی پروڈیوسر او جی ڈی سی ایل نے اوگرا کی مقرر کردہ پیداواری قیمت سے مزید 27 روپے فی کلوکمی کا اعلان کر دیا۔چیئرمین ایل پی جی ایسوسی ایشن نے بتایا کہ سرکاری پیداواری ادارہ او جی ڈی سی ایل نے اوگرا کی مقرر کردہ پیداواری قیمت 74,223.47روپے کو کم کر کے 47,000 مقرر کردی، اوگرا نے گھریلو سیلنڈر کی قیمت 1,572روپے اور کمرشل سلنڈر کی قیمت 6,050 روپے مقرر کی تھی، ایل پی جی اوگرا کی مقرر کردہ قیمت سے گھریلو سیلنڈر 300 روپے اور کمرشل سیلنڈر 1250روپے سستا ہو گیا ہے۔ایل پی جی پیداواری قیمت میں 27 روپے فی کلو کمی کے بعد اب مارکیٹ میں قیمت 110 روپے فی کلو، گھریلو سیلنڈر 1270روپے اور کمرشل سیلنڈر 4794 روپے میں دستیاب ہے، اور پاکستان کے بڑے شہروں لاہور، کراچی، اسلام آباد، فیصل آباد، گوجرانوالہ اور ملتان میں 100روپے فی کلو پر آگئی ہے، جب کہ پہاڑی علاقے (گلگت بلتستان، باغ، آزاد کشمیر وغیرہ) میں 115روپے فی کلو پر آگئی ہے۔

صحت

کرونا ویکسین کی افادیت کو ایک بار پھر ایک بڑی طبی تحقیق کے ذریعے ثابت کر دیا گیا ہے، ریسرچ میں سامنے آیا ہے کہ ویکسین کی ایک خوراک سے گھر میں وائرس کے پھیلاؤ میں 50 فی صد سے زائد کمی آ جاتی ہے۔پبلک ہیلتھ انگلینڈ (پی ایچ ای) کی جانب سے شائع ہونے والی اس تحقیق میں کہا گیا ہے کہ فائزر یا آسٹرا زینیکا کی ویکسین کی ایک خوراک گھر میں ایک فرد سے دیگر افراد میں کرونا کی منتقلی کو پچاس فی صد سے بھی زیادہ کم کر دیتی ہے۔ریسرچ کے دوران یہ معلوم ہوا کہ وہ افراد جنھیں ویکسین کی پہلی خوراک دی گئی تھی، جب 3 ہفتے بعد وہ وائرس سے متاثر ہوئے تو وہ ویکسین نہ لینے والوں کی نسبت اپنے گھر والوں میں کم وائرس پھیلانے کا سبب بنے۔اس طبی تحقیق میں 24 ہزار گھروں کے 57 ہزار سے زائد افراد کے ڈیٹا کا ویکسین نہ لگوانے والے تقریباً 10 لاکھ کیسز سے تقابل کیا گیا، اور یہ نتیجہ حاصل ہوا کہ ویکسین لینے والے افراد اپنے گھروں میں ویکسین نہ لینے والوں کی نسبت نصف سے بھی کم تناسب سے وائرس پھیلاتے ہیں۔برطانوی وزیر صحت میٹ ہینکاک نے اس تحقیق کے نتائج پر بیان دیتے ہوئے اسے ایک شان دار خبر قرار دیا، اور کہا کہ ہم پہلے ہی جانتے تھے کہ ویکسین زندگیاں بچاتی ہے، تاہم یہ تحقیق حقیقی دنیا کا تفصیلی ڈیٹا ہے، جو دکھا رہی ہے کہ اس سے وائرس کا پھیلاؤ بھی کم ہوتا ہے۔میٹ ہنکاک کا کہنا تھا ریسرچ سے اس بات کو تقویت ملی ہے کہ ویکسین وبا سے نکلنے کا بہتری ذریعہ ہے، یہ آپ کی اور آپ کے گھر والوں کی حفاظت کرتی ہے۔ایک اور طبی تحقیق میں بھی یہ بات سامنے آئے تھی کہ ویکسین کی ایک خوراک کے 4 ہفتوں بعد وائرس پیدا ہونے کا خدشہ 65 فی صد سے زائد کم ہو جاتا ہے۔

حجر اسود

جدید ترین تکنیک سے بنائی گئی ’جنت کے پتھر‘ کی حیرت انگیز تصاویر
خانہ کعبہ کے جنوب مشرقی حصے پر موجود مقدس پتھر حجراسود کی ایسی تصاویر پہلی مرتبہ منظر عام پر لائی گئی ہیں جو فوٹوگرافی کی جدید ترین تکنیک کے ذریعے بنائی گئی ہیں۔سعودی عرب میں موجود مسلمانوں کی دو مقدس مساجد مسجد النبوی اور مسجد الحرام کے امور کی نگرانی کرنے والے ادارے رئاسة شؤون الحرمين کے ٹوئٹر اور انسٹاگرام اکاؤنٹس سے ایسی تصاویر شیئر کی گئی ہیں جنھیں اب تک حجراسود کی انتہائی باریک بینی سے بنائی گئی تصاویر میں شمار کیا جا رہا ہے۔رئاسة شؤون الحرمين کے مطابق ’فوکس سٹیک پینورما‘ نامی فوٹوگرافی تکنیک کے ذریعے بنائی گئی ان تصاویر کی سات گھنٹے تک عکس بندی کی گئی اور ان تصاویر کو اکٹھا کرنے میں تقریباً 50 گھنٹوں کا وقت لگا ہے۔اس ٹیکنالوجی کے ذریعے مختلف تصاویر کو جوڑ کر ایک انتہائی مستند تصویر بنائی جاتی ہے جس کی کوالٹی بہترین ہوتی ہے اور اس کے ذریعے تصویر کی باریکیوں پر بھی بخوبی نظر ڈالی جا سکتی ہے۔اس تکنیک کے حوالے سے مزید معلومات فراہم کرتے ہوئے اس ٹوئٹر اکاؤنٹ کے ذریعے بتایا گیا کہ یہ تصویر بنانے میں سات گھنٹے صرف ہوئے۔ اس دوران 1050 فاکس سٹاک پینوراما بنائے گئے اور بالآخر 50 گھنٹوں کی پراسیسنگ کے بعد جو تصویر سامنے آئی وہ 49 ہزار میگا پکسلز پر مشتمل تھی۔اس پتھر کی وضع انڈے جیسی ہے جس میں کالے اور سرخ رنگ کا خوبصورت امتزاج ہے۔ اس کا قطر تقریباً 30 سینٹی میٹر ہے اور یہ خانہ کعبہ کے جنوب مشرقی کونے پر دیوار کے ساتھ رکھا ہے۔ان تصاویر کے سوشل میڈیا پر شیئر ہوتے ہی اکثر صارفین اس پتھر کی خوبصورتی کے حوالے سے تبصرے کیے تو کسی نے کہا کہ اللہ کا شکر ہے کہ اب میں حجر اسود کو سپر ریزولوشن میں دیکھ سکتا ہوں۔مسلمانوں کے لیے حجر اسود کی تاریخی اہمیت ہے اور عمرے اور حج کی غرض سے خانہ کعبہ کا طواف کرنے والوں کے لیے اس پتھر کا چومنا لازمی ہے لیکن بھیڑ کی وجہ سے ہاتھ کے اشارے سے بھی چوما جا سکتا ہے۔زائرین حج اسے چومنے کے لیے ایسے اوقات کا انتخاب کرتے جب طواف میں بھیڑ کم ہو تاکہ ان کے حج کے ارکان پورے ہوں۔اس پتھر سے جڑی تاریخ دراصل مذہب اسلام سے بھی زیادہ قدیم ہے۔ روایات کے مطابق یہ پتھر اس وقت جنت سے اتارا گیا تھا جب حضرت ابراہیم اور ان کے صاحبزادے حضرت اسماعیل ساتھ مل کر خانہ کعبہ کی تعمیر کر رہے تھے اور انھیں تعمیر مکمل کرنے کے لیے ایک پتھر کی ضرورت تھی۔پیغمبر اسلام کو نبوت دینے جانے سے قبل خانہ کعبہ کی مرمت ہوئی تھی جس کے بعد حجر اسود کو اس کی جگہ پر رکھنے کے لیے قبائل میں اختلاف ہو گیا تھا اور سب چاہتے تھے کہ یہ شرف انھیں حاصل ہو، چنانچہ یہ فیصلہ کیا گیا کہ کل جو پہلا شخص خانہ کعبہ کی جانب آئے گا وہی فیصل ہوگا۔اس دن سب سے پہلے وہاں تشریف لانے والی شخصیت حضرت محمد کی تھی اور انھوں نے اپنے ہاتھ سے پتھر اٹھا کر اپنی چادر پر رکھی اور تمام قبائل سے کہا کہ وہ چادر کے کونوں کو پکڑ کر اسے مطلوبہ جگہ پر رکھ دیں اور تمام قبائل نے ان کے فیصلے کو قبول کیا۔

یوروپ یونین

حکومت نے یورپی پارلیمنٹ کی پاکستان مخالف قرارداد کے جواب میں ناموس رسالتؐ کے قانون اور قادنیوں کو کافر قرار دینے کے معاملے پر کوئی سمجھوتہ نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔وزیراعظم کی سربراہی میں ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں یورپی پارلیمنٹ کی جانب سے پاکستان کے جی ایس پی پلس اسٹیٹس پر نظرثانی کی قرارداد منظور ہونے کے بعد کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔
ذرائع کے مطابق شرکا کو بتایا گیا کہ جی ایس پی پلس اسٹیٹس ختم ہونے سے پاکستان کو تین ارب ڈالر سالانہ کا نقصان ہوسکتا ہے، یورپی یونین کے ساتھ انسانی آزادیوں کے حقوق، جبری گمشدگیوں کے خاتمے، اقلیتوں کے تحفظ، خواتین کے حقوق سمیت 8 معاہدے ہوئے تھے لیکن معاہدے میں مذہب کے حوالے سے کوئی شرط طے نہیں کی گئی تھی، کابینہ کی قانون ساز کمیٹی سے منظوری لے کر جلد مسودے اسمبلی میں پیش کیے جائیں گے۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں طے کیا گیا کہ ناموس رسالتؐ کے تحفظ کے قانون اور قادیانیوں کو کافر قرار دینے کے معاملے پر کوئی سمجھوتا نہیں ہوگا، پاکستان کی ریاست نہ خود اور نہ کسی کو مذہب کے نام پر تشدد کی اجازت دے گی، تمام یورپی یونین کے ممالک سے اس معاملے پر بات کی جائے گی۔

الیکشن این اے 249 میفتا

الیکشن کمیشن آف پاکستان میں مسلم لیگ نون کے رہنما مفتاح اسماعیل کی این اے 249 کے ضمنی انتخاب میں دوبارہ ووٹوں کی گنتی کی درخواست پر سماعت ہوئی، جس کے دوران نون لیگ کے وکیل سلمان اکرم راجہ نے دلائل دیتے ہوئے فارم 45 پیش کر دیئے۔اسلام آباد میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کے دفتر میں کراچی کے قومی اسمبلی کے حلقے این اے 249 کراچی کے ضمنی انتخابات میں دوبارہ گنتی کے معاملے کی سماعت چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی سربراہی میں 4 رکنی بنچ کر رہا ہے۔
سماعت شروع ہوئی تو پیپلز پارٹی کے وکیل لطیف کھوسہ اور نون لیگ کے وکیل سلمان اکرم راجہ الیکشن کمیشن میں بروقت پیش نہیں ہوئے۔مسلم لیگ نون کے امیدوار مفتاح اسماعیل، مریم اورنگزیب، مصدق ملک اور محمد زبیر الیکشن کمیشن میں پیش ہوئے۔
پیپلز پارٹی کے امیدوار قادر مندوخیل، سعید غنی، نیئر حسین بخاری اور فاروق ایچ نائیک بھی کمیشن پہنچے۔
فاروق ایچ نائیک نے عدالت سے استدعا کی کہ ہمارے وکیل لطیف کھوسہ راستے میں ہیں، ان کا کچھ دیر انتظار کر لیں۔
مفتاح اسماعیل نے کہا کہ ہمارے وکیل بھی 5 منٹ میں کمیشن پہنچ جائیں گے جس پر الیکشن کمیشن نے سماعت میں 15 منٹ کا وقفہ لے لیا۔وکلاء کی آمد کے بعد دوبارہ سماعت شروع ہوئی تو نون لیگ کے وکیل سلمان اکرم راجہ نے دلائل کا آغاز کر دیا۔
انہوں نے فارم 45 الیکشن کمیشن کے سامنے پیش کر دیئے اور کہا کہ پولنگ بند کر کے فارم 45 اور 46 کی تیاری کے وقت کچھ ہوا۔
انہوں نے کہا کہ فارم 45 اہم دستاویز ہے، دستخط شدہ فارم 45 ہر پولنگ ایجنٹ کو دینا لازم ہے، تاہم 167 پولنگ اسٹیشنز پر فارم 45 پر کسی پولنگ ایجنٹ کے دستخط نہیں۔سلمان اکرم راجہ نے کہا کہ ہمیں ایک بھی فارم 46 جاری نہیں کیا گیا، کسی پر پولنگ ایجنٹ کا دستخط نہیں، پولنگ بند کر کے فارم 45 اور 46 کی تیاری کے وقت کچھ ہوا۔سلمان اکرم راجہ نے استدعا کی کہ فارم 46 کا معاملہ پریشان کن ہے، اس معاملے کی تحقیقات کی جائے۔