Pakistan

Maloon Rushdi

نبی کریم ﷺ کی شان میں گستاخی کرنے والا۔۔۔ملعون سلمان رشدی آج بھی ڈر اور خوف کے سائے میں زندگی گزار رہا ہے ۔ انیس سو اٹھاسی میں برطانوی ادیب کی گستاخانہ کتاب پر ایران نے فتوی بھی جاری کیا تھا ۔۔ فروری انیس سو نواسی میں پاکستان میں بھی سلمان رشدی کے خلاف شدید احتجاج کیا گیا تھا عمران خان تاریخی حوالہ دیتے ہوئے ایک بار پھر بھول کربیٹھے۔وزیر اعظم نے کہا ۔۔گستاخانہ کتاب کی اشاعت انیس سو نوے میں ہوئی۔جبکہ ملعون رشدی کی کتاب انیس سو اٹھاسی میں شائع ہوئی تھی
مونٹاج گستاخانہ کتاب کی اشاعت کے بعد دنیا بھر کے مسلمانوں میں غم و غصہ کی ایسی لہر دوڑ گئی پاکستان میں بھی شدید احتجاج کیا گیا مونٹاج فروری انیس سو نواسی میں آیت اللہ خمینی نے سب سے پہلے سلمان رشدی کے قتل کا فتوی جاری کیا آزادی اظہار کی آڑ میں مغرب مسلمانوں کے اس وقت بھی احتجاج کو نظر انداز کرتا رہا تھا ملعون سلمان رشدی آج بھی جہاں جاتا ہے ۔۔ موت کا خوف اس کے دل و دماغ پر حاوی رہتا ہے ملعون سلمان رشدی کی 1988 میں گستاخانہ کتاب ،عالم اسلام میں شدید احتجاج شاتم رسول آج بھی ڈر اور خوف کے سائے میں زندگی گزار رہا ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *