International

YOME KASHMIR AMERICAN DAY

ریاستی اسمبلی نے نیویارک میں ہر سال 5 فروری کو یوم کشمیر امریکا منانے کی قرارداد منظور کرلی جس کا پاکستان نے خیر مقدم کیا ہے۔ پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے سفارتی سطح پر اسلام آباد سے خطاب کیا ۔ رابطہ گروپ نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل ، سلامتی کونسل اور اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کی کونسل سے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ جموں کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں روکنے کے لئے بھارت پر زور دیا جائے۔یوم یکجہتی کشمیرکے حوالے سے رابطہ گروپ کا اجلاس نیو یارک میں ہوا جس میں پاکستان ، ترکی ، سعودی عرب ، نائیجر ، آذربائیجان کے مستقل نمائندوں نے شرکت کی، او آئی سی کے سیکرٹری جنرل کی نمائندگی اقوام متحدہ میں اسلامی کانفرنس کی تنظیم کے مبصر مشن کے خصوصی نمائندہ آگشن مہدی یوف نے کی ۔
پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے سفارتی سطح پر اسلام آباد سے خطاب کیا ۔ رابطہ گروپ نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل ، سلامتی کونسل اور اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کی کونسل سے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ جموں کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں روکنے کے لئے بھارت پر زور دیا جائے۔ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چوہدری نے ردعمل میں کہا ہے کہ نیویارک اسٹیٹ اسمبلی کی یوم کشمیر امریکا منانے کی قرارداد کی منظوری کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ قرار داد یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر منظور کی گئی جو خوش آئند ہے۔ پاکستانی اور کشمیری بھارت کے زیر قبضہ کشمیر میں حق خود ارادیت کی حمایت کا اعادہ کرتے ہیں۔
قرارداد کشمریوں کی جدوجہد کو تقویت دیتی اور کمشیریوں کی منفرد ثقافت اور مذہبی حیثیت کو تسلیم کرتی ہے اوریہ نیویارک سٹیٹ کی انسانی حقوق بشمول نقل و حرکت کی آزادیوں کی عکاس ہے۔ قرارداد ثبوت ہے کہ بھارت کشمیریوں کے انسانی حقوق کی پامالیاں چھپا نہیں سکتا۔قرارداد کے ذریعے بھارتی فوج کے مظالم اور کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے ان کے بنیادی حقوق کو تسلیم کرلیا گیا ، مظلوم کشمیریوں کی آواز امریکی ایوانوں تک پہنچانے میں پاکستان امریکا گروپ کی خصوصی کاوشیں شامل ہیں۔ ادھر مین ہیٹن میں پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی نے مظاہرہ کیا۔ادھر مقبوضہ جموںوکشمیر میں بھارتی انتظامیہ نے تیز رفتارفورجی انٹرنیٹ سروس اٹھارہ ماہ بعد بحال کر دی۔ علاوہ ازیں او آئی سی کشمیر رابطہ گروپ نے کشمیریوں کے حق خود ارادیت کی منصفانہ جدوجہد کیلئے اپنی غیر متزلزل حمایت کا اظہارکیاہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *