Pakistan

شوکت ترین پی سی فائنل

وفاقی وزیرخزانہ شوکت ترین نے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کو ملک کا سب سے بڑا چیلنج قرار دیدیا،، کہتے ہیں حکومت مشکل حالات میں آئی ایم ایف کے پاس گئی، موجودہ آئی ایم ایف کا پروگرام خاصا مشکل ہے،، ہم اس پروگرام سے نکل رہے ہیں لیکن سہولیات کے لیے بات چیت چل رہی ہے،اسلام آباد سے راحیل حسن کی رپورٹ اسلام آباد میں معاشی ٹیم کے ہمراہ پریس کانفرنس وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا حکومت نے اقتدار سنبھالا تو تاریخی کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ملا،آئی ایم ایف نے موجودہ پروگرام میں سخت شرائط رکھیں جس کے سیاسی اثرات ہوئے، ہم پروگرام سے نکل نہیں رہے لیکن سہولیات کیلئے بات چیت چل رہی ہے۔ ساٹ:وفاقی وزیر خزانہ نے مزید ٹیکس نہ لگانے کا بھی اعلان کردیا،، کہتے ہیں ٹیکس نیٹ بڑھائیں گے اور آئندہ بجٹ میں ٹیکس گزاروں کو ہراسگی سے بچنے کے لیے اقدامات کریں گےساٹ:شوکت ترین نے کہا اس وقت معیشت کو کرونا سے خطرہ ہے ورنہ ہماری معیشت کی بحالی شروع ہوچکی ہے،، کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ملک کا سب سے بڑا چیلنج ہے،جی ڈی پی گروتھ کو کم از کم پانچ فیصد پر رکھنا ہوگا ساٹ:ان کا کہنا تھا کہ ملک میں اتنے پاور پلانٹس لگادیے ہیں کہ یہ شعبہ گوریلا بن گیا ہے، آئی ٹی کے شعبے میں ترقی گیم چینجر ثابت ہوسکتی ہے،،آئی ٹی کا شعبے کی گروتھ 65 فیصد سے 100 فیصد پر لانا ہوگی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *