International

کرغزستان تاجکستان کلاس

کرغیزستان اور تاجکستان میں سرحد پر شدید جھڑپوں میں اکتیس افراد ہلاک، جھڑپیں سرحد کے قریب ایک ڈیم منصوبے کی وجہ سے شروع ہوئیں جنہوں نے شدت اختیار کرلی، فائرنگ اور گولہ باری سے سرحدی چیک پوسٹ کے ساتھ ساتھ بیس گھر، اسکول، متعدد دکانیں تباہ ہو گئیں،ہزاروں افراد نقل مکانی پر مجبور ہوگئے پانی کے ذخیرے کا تنازعہ اکتیس جانیں لے گیا کرغیزستان اور تاجکستان کے درمیان ڈیم کے تنازعے پر مقامی شہریوں میں تصادم ہوا جس کے بعد دونوں ملکوں کی فوجیں بھی آمنے سامنے آ گئیں، فائرنگ اور گولہ باری سے دونوں طرف جانی نقصان ہوا ہے،کرغیزستان کی وزارت ہنگامی صورتحال نے بیان میں بتایا تاجک فورسز کی گولہ باری کے باعث ایک چیک پوسٹ، بیس گھر، آٹھ دکانیں اور ایک کسینو تباہ ہوا ہے، متعدد افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں جبکہ دس ہزار سے زائد شہری نقل مکان پر مجبور ہوئے ہیں ڈیم منصوبے کے تنازعے پر خونریز جھڑپوں کے بعد کرغیز اور تاجک صدور کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ، سیز فائر پر اتفاق کرلیا، کرغیز صدر نے بیان میں کہا معاملات کو رواں ماہ مذاکرات کے ذریعے حل کیا جائے گاکرغیزستان اور تاجکستان میں سرحد پر شدید جھڑپوں میں اکتیس افراد ہلاک خونریز جھڑپوں کے بعد کرغیز اور تاجک صدور کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *